پاکستان کے قدیم اور نادر آثار قدیمہ کے نوادرات کی فرانس سے وطن واپسی

 پاکستان کے قدیم اور نادر آثار قدیمہ کے نوادرات کی فرانس سے وطن واپسی 

پیرس 2 جولائی:2019 پاکستان بلوچستان سے تعلق رکھنے والے انتہائی قدیم اور نادر آثار قدیمہ کے نوادرات حکومت فرانس نے ایک پیچیدہ اور مشکل کارروائی مکمل ہونے کے بعد پاکستان کے حوالے کر دیئے۔

آثار قدیمہ کے یہ نوادرات سال 2006-07 میں فرانس کے محکمہ کسٹم نے پیرس کے ہوائی اڈے پر ایک کارروائی کے دوران تحویل میں لے لیئے تھے۔  

سفارت خانہ پاکستان پیرس میں آج ہونے والی اس سادہ و پروقار تقریب کے دوران بلوچستان کی قدیم تہذیب سے وابستہ آثار قدیمہ کے قیمتی و نایاب نوادرات کو جناب روڈولوف جنٹز ڈائریکٹر جنرل کسٹمز برائے فرانسیسی وزارت ایکشن و پبلک اکاؤنٹس نے سفارت خانہ کے چارج ڈی افیئراینڈ ڈپٹی ہیڈ آف مشن جناب محمد امجد عزیز قاضی کے حوالے کیا۔

اس موقع پر ڈائریکٹر ثقافت، تعلیم، تحقیق اور نیٹ ورک برائے وزارت یورپ و خارجی امور، سربراہ محکمہ بین الاقوامی امور برائے وزرات ثقافت اور صحافیوں کی بڑی تعداد موجود تھی۔

جناب امجد عزیز قاضی نے اس تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ان آثار قدیمہ کے قیمتی اور نایاب نوادرات کی واپسی کیلئے عدالتی و دیگر قانونی کارروائی کے دوران حکومت فرانس اور فرانسیسی محکمہ کسٹم کی طرف سے فراہم کی جانے والی معاونت اور تعاون پر ان کا شکریہ ادا کیا۔  

جناب روڈولوف جنٹز ڈائریکٹر جنرل کسٹمز فرانس اور حکومت فرانس کے دیگر نمائندوں نے آثار قدیمہ کے نوادرات کی پاکستان کو واپسی پر خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ان نوادرات کو فرانسیسی کسٹمز حکام نے یونیسکو کنونشن کے تحت ہونے والے معاہدے کے تحت تحویل میں لیا تھا جس پر پاکستان اور فرانس نے بھی دستخط کیئے ہیں۔ 

اس معاہدے کے تحت دونوں ممالک کے درمیان قدیم اور نادر نوادرات کی سمگلنگ کو روکنا اور ان کی ان ممالک کو واپسی کی شقیں شامل ہیں۔ 

بعد ازاں، ڈائریکٹر جنرل کسٹمز نے باضابطہ طور پر ان نادر نوادرات کو سفارت خانہ پاکستان برائے فرانس کے چارج ڈی افیئر اینڈ ڈپٹی ہیڈ آف مشن کے حوالے کی

اپنا تبصرہ بھیجیں