سٹاک مارکیٹ کریش گئی، ملکی تاریخ کی سب سے بڑی 2375.97 پوائنٹس کی مندی

رواں ہفتے کے پہلے کاروباری روز کے دوران پاکستان سٹاک مارکیٹ کی تاریخ کی سب سے بڑی مندی دیکھی گئی، 100 انڈیکس 2375 پوائنٹس گر گیا۔

آج پاکستان سٹاک مارکیٹ میں 2375.97 پوائنٹس کی مندی ملکی تاریخ کی سب سے بڑی مندی ہے، اس سے قبل 11 جولائی 2017ء کے دوران پاکستان سٹاک مارکیٹ میں 2153 پوائنٹس کی بدترین مندی دیکھی گئی تھی۔

تفصیلات کے مطابق آج جب کاروباری ہفتے کا آغاز ہوا تو مارکیٹ میں مندی کا رجحان دیکھا گیا اور کے ایس ای 100 انڈیکس ایک ہزار 651 پوائنٹس گر کر 34 ہزار 409 پوائنٹس پر پہنچ گیا، جس کے بعد کاروبار کو کچھ دیر کے لیے روک دیا گیا۔

پاکستان سٹاک مارکیٹ میں یہ مسلسل دوسرے ہفتے میں چوتھی مرتبہ ہے کہ مندی کے باعث کاروبار کو 45 منٹ کے لیے روکا گیا۔ 45 منٹ تک کاروبار معطل رہنے کے بعد جب دوبارہ بحال ہوا تو بھی مارکیٹ میں مندی کا رجحان برقرار دیکھا گیا اور 11 بجکر 42 منٹ پر کے ایس ای 100 انڈیکس ایک ہزار 601 پوائنٹس کی کمی کے ساتھ 34 ہزار 459 پوائنٹس پر موجود رہا۔

تاہم وقت کے گزرنے کے ساتھ ساتھ مندی میں اضافہ دیکھا جارہا ہے اور 12.35 منٹ تک کے ایس ای 100 انڈیکس 2 ہزار 209 پوائنٹس کم ہوگیا۔ مارکیٹ میں مسلسل ہیجانی صورتحال اس وقت شدید ہوگئی جب دوپہر 2 بجکر 10 منٹ کے قریب کے ایس ای 100 انڈیکس 2 ہزار 412 پوائنٹس تک کم ہوکر 33 ہزار 648 پوائنٹس پر آگیا۔

کاروبار کے اختتام پر پاکستان سٹاک مارکیٹ 2375.97 پوائنٹس کی مندی کے بعد 33684.91 پوائنٹس کی سطح پر بند ہوا۔ بدترین مندی کے باعث سرمایہ کاروں کے 380 ارب روپے ڈوب گئے۔

پورے کاروباری روزکے دوران کاروبار میں 6.59 فیصد کی تنزلی دیکھی گئی جبکہ 17 کروڑ 2 لاکھ 50 ہزار 710 شیئرز کا لین دین ہوا، زیادہ تر سرمایہ کاروں کی طرف سے شیئرز کی فروخت کو ترجیح دی گئی اور ہاتھ روکے رکھا۔

معاشی ماہرین کا کہنا ہے کہ حصص مارکیٹ میں بدترین مندی کی سب سے بڑی وجہ عالمی سطح پر کرونا وائرس کے ساتھ ساتھ پاکستان میں بڑھتے ہوئے کرونا وائرس کیسز کی تعداد ہے۔ سرمایہ کار پیسے لگانے سے گریزاں ہیں اور حالات بہتر ہونا کا انتظار کر رہے ہیں۔

یاد رہے کہ گزشتہ ہفتے کے آخری روز بھی حصص مارکیٹ ایک ہزار 682 پوائنٹس کی کمی کے بعد کاروبار کو روکا گیا تھا تاہم بعد ازاں مارکیٹ بند ہونے پر مثبت رجحان دیکھنے میں آیا تھا اور 100 انڈیکس میں 104.19 پوائنٹس کی بہتری دیکھی گئی تھی۔

12 مارچ کو بھی سٹاک مارکیٹ میں بھی شدید مندی کا رجحان دکھا گیا تھا اور کے ایس ای 100 انڈیکس 4.53 فیصد یا ایک ہزار 707 پوائنٹس کی کمی پر بند ہوا تھا۔

9 مارچ کو کاروبار شروع ہونے کے کچھ ہی دیر بعد کے ایس ای 100 انڈیکس 2 ہزار 302 پوائنٹس گر گیا تھا جس کے باعث مارکیٹ سے 184 ارب روپے کا بھاری سرمایہ صاف ہو گیا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں